اہم خبریں

سعودی عرب میں مقیم پاکستانیوں سمیت تمام تارکین کو خبردار کر دیا گیا

اگر کسی سرکاری یا نجی ادارے یا شاپنگ مال میں داخل ہوتے وقت ٹمپریچر چیک کروانے سے انکار کیا یا سماجی فاصلے کا خیال نہ رکھا تو ڈی پورٹ کر دیا جائے گا

جدہ (7 جنوری2021ء) سعودی عرب نے کورونا وائرس کی نئی قسم سامنے آنے کے بعد ایس او پیز پرعمل درآمد کروانے کے لیے سخت پابندیوں کا اعلان کر دیا ہے۔ جو افراد ان گائیڈ لائنز پر عمل نہیں کریں گے ، انہیں سخت سزاؤں کا سامنا کرنا پڑے گا۔ سعودیہ میں مقیم تمام مقامی افراد اور تارکین کو خبردار کر دیاگیا ہے کہ وہ کسی بھی سرکاری محکمے یا ادارے، نجی ادارے یا تجارتی مرکز (شاپنگ مال، جنرل اسٹور وغیرہ) میں داخل ہوتے وقت اپنا ٹمپریچر چیک کروانے کے پابند ہوں گے اور سماجی فاصلے کی پابندی بھی لازمی کرنا ہو گی۔  اگر ان میں سے کسی ایک ہدایت کو بھی نظر انداز کیا تو سخت کارروائی کا سامنا کرنا پڑے گا۔ کیونکہ کورونا کی موجودہ وبا کے دوران ان ایس او پیز پر عمل نہ کرنا جُرم ہے جس پر سزا اور جرمانے کا سامنا کرنا ہو گا۔
وزارت داخلہ نے آگاہ کیا کہ اگر اگر کوئی شخص پہلی بار ٹمپریچر چیک کروانے سے انکار کرتا ہے یا سماجی فاصلے کا خیال نہیں رکھتا تو اس پر ایک ہزار ریال کاجرمانہ عائد ہو گا۔جبکہ کوئی شخص ان میں سے کوئی بھی خلاف ورزی دوسری بار کرتا ہے تو اسے دو ہزار ریال کا جرمانہ بھُگتنا ہو گا۔ تاہم اگر کوئی غیر ملکی سرکاری و تجارتی مراکز میں داخلے کے وقت ٹمپریچر چیک کروانے سے انکار کرتا ہے تو اسے فوری طور پر سزا دی جائے گی، جس کے بعد اسے مملکت سے ڈی پورٹ کر دیا جائے گا اور اس کے دوبارہ داخلے پر پابندی لگا دی جائے گی۔مملکت میں تمام افراد سے کہا گیا ہے کہ وہ کسی بھی جگہ پر جمگھٹا لگانے سے باز رہیں اور نہ ہی کوئی تفریحی یا نجی نوعیت کا اجتماع یا تقریب منعقد کریں۔ اگر کسی جگہ پر ایسی کوئی خلاف ورزی نظر آئے تو فوری طور پر ٹول فری نمبر 999 پر اطلاع دی جائے ۔ وزارت کا مزید کہنا ہے کہ ٹمپریچر چیک کروانے پر پابندی تمام لوگوں کے مفاد میں ہے، اس لیے متعلقہ اہلکاروں سے بھرپور تعاون کریں ۔ اس کے علاوہ سماجی فاصلے کی پابندی کا خیال رکھ کر اپنی اور دوسروں کی صحت اور زندگیوں کا تحفظ کیا جا سکتا ہے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *