اہم خبریں

پاکستان میں مہنگائی، ایشیا میں کونسی پوزیشن؟ مہنگائی پر قابو پانے کے لئے وزیر اعظم عمران خان سیاسی دباؤ کا شکار، ایشیا کے تمام ممالک میں مہنگائی کی شرح میں پاکستان پہلے نمبر پر۔

امریکی نشریاتی ادارے بلوم برگ کی جانب سے جاری کردہ رپورٹ کے مطابق 2020 میں پاکستان کی مہنگائی کی شرح دسمبر میں آٹھ فی صد تھی جو ایشیائی ممالک میں سب سے زیادہ ہے، تاہم آئی ایم ایف نے جون تک ختم ہونے والے مالی سال میں یہ شرح آٹھ عشاریہ آٹھ فیصد تک ہونے کی پیشن گوئی بھی کی ہے۔ تاہم مہنگائی پر قابو پانے کے لئے وزیر اعظم عمران خان بہت زیادہ سیاسی دباؤ میں ہیں، اور مہنگائی پر قابو پانے کے لئے ہر ممکن کوشش کر رہے ہیں۔ امریکی نشریاتی ادارے کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ مہنگائی پر قابو پانے کے حکومتی اقدامات کے سلسلے میں کراچی کی بندرگاہوں پر درآمدی گندم اور چینی جیسی غذائی اجناس و اشیاء کے بحری جہازوں کی قطاریں لگ گئی ہیں، تاہم 60 سے زائد بحری جہازوں کو 36 لاکھ ٹن گندم لانے کے لئے بُک کیا گیا ہے۔البتہ بندرگاہیں صرف انہیں اشیاء کی درآمدات میں مصروف ہیں جس کی وجہ سے پاکستان کی سیمنٹ کی برآمدات میں مسلسل دو ماہ سے کمی دیکھنے میں آ رہی ہے۔گذشتہ ماہ پاکستان کی سیمنٹ کی برآمدات 18 فیصد گھٹ کر 633431 ٹن ہو گئی جو نومبر سے مزید پانچ فیصد کم ہو گئی اور اس کی بڑی وجہ سیمنٹ لوڈ کرنے کے لئے برتھوں کی عدم دستیابی قرار دی گئی ہے۔مہنگائی سے عوام بے حد پریشان ہیں جبکہ وزیرِ اعظم بھی مہنگائی کی وجہ سے سیاسی دباؤ کا سامنا کر رہے ہیں، تاہم حکومت قیمتوں کو روکنے کے لئے اب تیزی سے گندم، چینی اور کینولا جیسے ضروری سامان کی درآمد کر رہی ہے۔واضح رہے کہ دسمبر تک چار مہینوں میں کراچی پورٹ پر گندم کے ریکارڈ 30 جہاز پر لائے گئے، تاہم پاکستان سمندری امور کے وزیر علی حیدر زیدی نے اس حوالے سے ٹوئٹ بھی کیا انہوں نے ٹوئٹر پوسٹ میں کہا کہ اتنے ہی بحری جہاز مزید مارچ تک گندم لائیں گے اور گندم کی 36 لاکھ (تین عشاریہ چھ ملین ) ٹن درآمدات کو مکمل کیا جائے گا۔ یاد رہے کہ 2020 میں پاکستان میں مہنگائی کی شرح اس خطے میں سب سے زیادہ رہی جو کہ 10.7 فیصد تھی، بھارت میں مہنگائی کی شرح 6.9، بنگلا دیش کی 5.6، نیپال کی 6.4، بھوٹان کی 3.6، سری لنکا کی 4.7 اور چین میں مہنگائی کی شرح 2.9 فیصد تھی

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *